4

جمہوریت کے ثمرات نچلی سطح تک پہنچانے کیلیئے بلدیاتی اداروں کو فعال کیا جانا از بس ضروری ہے۔ تعلیمی نظام بھی بلدیاتی اداروں کے سپرد کر کے تعلیم میں بہتری پیدا کی جاسکتی ہے۔ رانا زاہد محمود

فیصل آباد (پ ر)اپنے مرکزی دفتر تھرڈ فلور کوہ نورون پلازہ میں آنے والے سیاسی و سماجی معززین میاں فرخ نذیر فری سابق ناظم، میاں عادل مجید امیدوار چیئرمین CC-94، محمد اسلم جنرل کونسلر CC-94، فیاض رحمت بھٹی جنرل کونسلر CC-97، ملک احسان جنرل کونسلر CC-93، محمد علی ڈوگر جنرل کونسلر CC-78، غفار احمد گجر جنرل کونسلر CC-79، رانا علیم جنرل کونسلر CC-152، سیاسی ورکرز محمد سہیل ، محمد عثمان گجر ، شبیر احمد گجر، خالد محمود، عبدالحفیظ، رانا احسن سلیم، رانا محمد محسن سلیم، حافظ زبیر، محمد جاوید، محمد ارسلان، سعید گجر، میاں عدنان و دیگر سے گفتگو کرتے ہوئے رانا زاہد محمود نے کہا کہ بلدیاتی اداروں کو فعال کر کے ہی حقیقی جمہوریت قائم کی جا سکتی ہے اور جمہوریت کے ثمرات عام شہری تک پہنچائے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خالی خزانہ اور بد حال معیشت چیخ چیخ کر سابق حکمرانوں کے مفاد پرستانہ رویوں کی نشاندہی کر رہی ہے۔رانا زاہد محمود نے کہا کہ جس ملک اور شہر میں بلدیاتی ادارے فعال اور بلدیاتی اداروں کے سربراہ دیانتدار ہوں گے اس ملک کو ترقی کرنے سے کوئی نہیں روک سکتا ، انہوں نے کہا کہ تعلیم اور صحت کی سہولتیں ہر انسان کی بنیادی ضرورت ہے جو ہر حکومت کی اولین ترجیح ہونی چاہیئے مگر بدقسمتی سے اس ملک میں ایسا نہیں ہوا ۔ عوام سے ووٹ لینے کے بعد انہیں بے یارو مدد گار چھوڑ دیا گیا۔ ایسا آئندہ نہیں ہو گا۔ رانا زاہد محمود نے کہا کہ تعلیم اور صحت کے محکمے بلدیاتی اداروں کے سپرد کر دینے چاہئیں مجھے یقین ہے کہ دیانت دار سربراہ بلدیات کی قیادت مثبت تبدیلی کا پیش خیمہ ثابت ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ تبدیلی ہمیشہ اوپر سے آتی ہے۔ عوام اپنے حکمرانوں کی پیروی کرتے ہیں۔ اگر حکمران دیانتدار، محنتی، بہادر، سادہ اور پیار کرنے والا ہو گا تو عوام بھی یہی عادات اپنائیں گیاور معاشرہ ، شہر اور ملک خوبصورت ہو جائے گا اور ترقی کرے گا۔ بعد میں آنے والے معزز مہمانوں کیلیئے عشائیے کا اہتمام کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں