7

وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی ہدایت پر ضلعی انتظامیہ کی طرف سے قبضہ مافیا کے خلاف گرینڈ آپریشن کے سلسلے میں گزشتہ ایک ماہ کے دوران ضلع کے مختلف دیہی علاقوں سے ساڑھے پانچ ارب روپے مالیت کی 24ہزار49کنال سرکاری اراضی ناجائز قابضین سے واگزار کرائی گئی ہے۔یہ بات ڈپٹی کمشنر سردار سیف اللہ ڈوگر نے ایک اجلاس کے دوران ارکان اسمبلی کو حکومتی پالیسیوں پر عملدرآمد کے سلسلے میں بریفنگ دیتے ہوئے بتائی

فیصل آباد(فراز نیوز،مانیٹرنگ ڈیسک )۔سی پی او اشفاق احمد خاں بھی موجود تھے۔اس موقع پر صوبائی وزیر سماجی بہبود محمداجمل چیمہ‘معاون خصوصی وزیر اعلی پنجاب ملک عمر فاروق‘دیگر ارکان اسمبلی فیض اللہ کموکا‘چوہدری عاصم نذیر‘فردوس رائے‘لطیف نذر‘میاں وارث عزیز‘شکیل شاہد‘خیال کاسترو‘چیئرمین ایف ڈی اے ڈاکٹر اسد معظم ودیگرموجودتھے۔ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ ریونیو ریکارڈ کے مطابق ضلع کے مختلف دیہی علاقوں میں 32ہزار29کنال اراضی ناجائز قابضین کے زیرقبضہ تھی جس میں سے سب سے زیادہ تحصیل جڑانوالہ میں 23ہزار618کنال سرکاری اراضی پر ناجائز قبضہ مسلط تھا جبکہ تحصیل سمندری میں 7ہزار23کنال،تحصیل صدر میں 856کنال،تحصیل سٹی میں 375کنال،تحصیل تاندلیانوالہ میں 65،اورچک جھمرہ میں 90کنال اراضی زیر قبضہ تھی۔انہوں نے بتایا کہ بقایا 5ہزار4سو 76کنال سرکاری اراضی ناجائز قابضین سے واگزار کرانے کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں جس میں سے بعض کے مقدمات عدالتوں میں زیر سماعت ہیں۔ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایات کے مطابق ضلع میں کلین اینڈ گرین پنجاب پروگرام پر عملدرآمد جاری ہے جس کے تحت صفائی ستھرائی کی صورت حال کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ مختلف محکموں کی طرف سے دستیاب جگہوں پر پونے دو لاکھ پودے لگائے گئے ہیں جبکہ محکمہ تعلیم کے 10لاکھ پودے لگانے کا ٹارگٹ اس کے علاوہ ہے۔انہوں نے بتایا کہ بجلی چوروں کے خلاف بھی گرینڈ آپریشن جاری ہے اس سلسلے میں خفیہ معلومات کے حصول کے لئے ڈی سی آفس میں سیل قائم کیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ ضلعی انفورسمنٹ کمیٹی کے زیراہتمام بڑے بجلی چوروں کے خلاف قانونی کارروائی اورآپریشن کی نگرانی کے لئے مربوط حکمت عملی اختیار کی گئی ہے تاکہ کوئی بااثر بجلی چور قانون کی گرفت سے نہ بچ سکے۔ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ عوام کو تیزرفتار ریلیف کی فراہمی کے لئے محکمانہ سروسز کے معیار میں بہتری لارہے ہیں جبکہ اوپن ڈورپالیسی پربھی کار بند ہیں جس کے تحت صبح 10سے 12بجے تک عوام کے مسائل ومشکلات براہ راست سننے اور ان کے حل کے لئے احکامات جاری کئے جاتے ہیں۔سی پی او اشفاق احمد خاں نے کہا کہ ضلع میں جرائم کی روک تھام اورامن وامان کی صورت حال قابو میں رکھنے کے لئے سائنسی بنیادوں پر ہمہ جہت اقدامات کئے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ تھانوں کی انسپکشن اورپولیس کی پٹرولنگ کے نظام میں مزید بہتری لانے کی کوشیں بھی جاری ہیں تاکہ سٹریٹ کرائمز کی بھرپور طریقے سے حوصلہ شکنی ہوسکے۔اجلاس کے دوران ارکان اسمبلی نے آسیہ مسیح کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے نتیجہ میں امن وامان کے حوالے سے پیدا شدہ صورت حال میں بہترین انتظامی وحفاظتی حکمت عملی اختیار کرنے پرڈویژنل وضلعی انتظامیہ اور پولیس کی کاوشوں کو سراہا اور کہا کہ عوام کو ہر شعبہ میں ریلیف کی فراہمی،مظلوم کی دادرسی،پرامن ماحول اورجرائم پر قابو پانے،عوامی بھلائی اور تعمیر وترقی کے سلسلے میں دیگر اقدامات کے سلسلے میں سرکاری محکموں اورمنتخب نمائندوں کے مقاصد یکساں نوعیت کے ہیں۔اس ضمن میں مل جل کر مثبت تبدیلی کے ثمرات عوام تک پہنچائیں گے۔انہوں نے امن وامان اورعوامی بہبود کے منصوبوں کے سلسلے میں اپنی بعض تجاویز بھی پیش کیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں