11

نئے سال کے آغازسے ہی قوانین پر عملدرآمد کروانے کا سلسلہ جاری کھلے مرچ مصالحوں کی فروخت کے خلاف صوبہ بھر میں کریک ڈاؤ ن شروع 81مقامات کی چیکنگ،1414کلوکھلے ملاوٹی مصالحہ جات ضبط، 43مصالحہ یونٹس کی پروڈکشن اصلاح تک بند ملاوٹی مصالحہ جات معدے اورانتڑیوں کے کینسر سمیت متعدد موذی بیماریوں کا سبب بنتے ہیں۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی اشیائے خورونوش میں مضر صحت اجزاء کی ملاوٹ اور دھوکہ دہی قطعاََ برداشت نہیں کی جائے گی۔کیپٹن (ر) محمد عثمان


فیصل آباد(فراز نیوز،مانیٹرنگ ڈیسک)پنجاب فوڈ اتھارٹی کی جانب سے نئے سال کے آغازسے ہی قوانین پر عملدرآمد کروانے کا سلسلہ جاری ہے۔کھلے مرچ مصالحوں کی فروخت کیخلاف فیصل آباد اور گردونواح میں کارروائیوں کا آغاز کر دیا گیاہے۔فوڈ سیفٹی ٹیموں نے متعدد مقامات کی چیکنگ کے دوران 1414کلوکھلے ملاوٹی مصالحہ جات تلف کر دیے ہیں۔یاد رہے کہ پنجاب فود اتھارٹی کی جانب سے بین شدہ مصالحہ جات اور ڈرنکس کی فروخت پر یکم جنوری2019سے پابندی عائد کی گئی تھی۔تفصیلات کے مطابق صوبہ بھر میں کھلے مصالحہ جات کی فروخت کے خلاف کریک ڈاؤ ن جاری ہے۔فیصل آباداور گردونواح میں 81مقامات کی چیکنگ کے دوران 1414کلوکھلے ملاوٹی مصالحہ جات ضبط جبکہ 43مصالحہ یونٹس کی پروڈکشن اصلاح تک بند کر دی گئی ہے۔علاوہ ازیں27 پوائنٹس پر مصالحہ جات پنجاب فوڈ اتھارٹی قوانین کے مطابق فروخت کیے جارہے تھے۔اس سے قبل پنجاب فوڈ اتھارٹی نے جون 2017 میں کھلے مصالحہ جات کی فروخت پر پابندی کے بارے میں آگاہ کر دیا گیا تھا۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ پابندی کا مقصد کھلی اشیائے خورونوش میں مضرِ صحت اشیاء کی ملاوٹ کرنیوالوں کی حوصلہ شکنی کرنا ہے۔ملاوٹی مصالحہ جات معدے اورانتڑیوں کے کینسرکا سبب بنتے ہیں۔کیپٹن (ر) محمد عثمان کا مزید کہنا تھا کہ ملاوٹ کا ناسور ختم کرنے کے لیے سخت فیصلے کرنا ہوں گے۔عوام کو صحت مند خوراک کی فراہمی کے ساتھ ساتھ درست معلومات فراہم کر نا ہماری ذمہ داری ہے۔ انہوں نے عوام سے گزارش کی ہے کہ وہ اپنے ارد گردہو نیوالی کسی بھی خلاف ورزی کی صورت میں پنجاب فوڈ اتھارٹی ٹال فری نمبر 080080500یا فیس بک پیج پر آگاہ کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں