11

ڈپٹی کمشنر سید احمد فواد کی زیر صدارت ہائی لیول ڈیزائن کمیٹی کے اجلاس میں شہر کے مختلف علاقوں میں12 کاروباری عمارتوں کی تعمیر کے نقشوں کی مشروط منظوری دی گئی جبکہ ایک کاروباری عمارت کی رہائشی علاقے میں تعمیر کی اجازت سے متعلق درخواست کو مسترد کردیا گیا۔

فیصل آباد(فراز نیوز،مانیٹرنگ ڈیسک)اجلاس کے دوران کاروباری عمارتوں کی تعمیر کی منظوری کے لئے پیش کی جانیوالی 29درخواستوں پر غوروخوض کرتے ہوئے 16عمارتوں کے نقشوں پر نظر ثانی،عمارتوں ڈھانچوں کے فنی معائنے اور بعض محکموں کی طرف سے این او سی کی عدم فراہمی پرانہیں موخر کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔اجلاس میں چیف آفیسر میونسپل کارپوریشن زبیر حسین،ڈی ایس پی ٹریفک عمران شریف،ڈپٹی ڈائریکٹر ہاؤسنگ محمد سعید،ایف ڈی اے،سول ڈیفنس،ریسکیو1122،واسا اوردیگر متعلقہ محکموں کے افسران نے شرکت کی جبکہ کاروباری عمارتوں کی تعمیر کے نقشوں/ڈیزائن کی اجازت کے درخواست گزاران بھی اجلاس میں موجود تھے۔ڈپٹی کمشنر نے ہر کیس کا انفرادی طور پر جائزہ لیتے ہوئے متعلقہ محکموں سے بلڈنگز بائی لاز اوردرکار تقاضوں کے بارے میں دریافت کرتے ہوئے قواعد وضوابط پر پورا اترنے والی درخواستوں کی مشروط منظوری دی اور کہا کہ ان کاروباری عمارتوں وپلازوںِ،شادی ہالزکے تعمیراتی مراحل کو چیک کیا جائے گا لہذا نقشوں و ڈیزائن کی خلاف ورزی نہ کی جائے بصورت دیگر تعمیر روک کر عمارت کو سیل کردیا جائے گا۔انہوں نے متعلقہ محکموں کے افسران سے کہا کہ وہ کمرشل عمارتوں کی تعمیر کے لئے محکمانہ کارروائی کے سلسلے میں این او سی کے اجراء سے متعلق اعتراض ہونے یا نہ ہونے کے بارے میں دوہفتوں کے اندر فیصلہ کریں اس ضمن میں تاخیر سے درخواست گزار کو پریشان نہ کیا جائے۔انہوں نے زور دیا کہ سب کمیٹی کی چھان بین کے بعد کیسز ہائی لیول ڈیزائن کمیٹی میں غوروخوض کیلئے پیش کئے جائیں تاکہ کسی قسم کے اعتراض یا قانونی تقاضوں کو پورا نہ کرنے کے سلسلے میں پیشگی نشاندہی کرلی جائے۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ کاروباری اورتجارتی عمارتوں کی تعمیر سے معاشی سرگرمیوں کو فروغ اورروزگار کے زیادہ مواقع میسر آئیں گے لہذاضلعی انتظامیہ مطلوبہ قوانین وشرائط کو پورا کرنے والی درخواستوں کی منظوری سے متعلق کیسز جلد نمٹانے پر یقین رکھتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں