36

فیصل آباد ( فراز نیوز،مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعلی پنجاب سردار محمد عثمان بزدار کی حکم پر محکمہ اینٹی کرپشن نے کرپشن میں ملوث بڑے مگر مچھوں کے خلاف کارروائیوں کا سلسلہ تیز کر دیاہے ۔اس سلسلے میں محکمہ اینٹی کرپشن فیصل آباد نے کارروائی کرتے ہوئے لینڈ مافیا سے کروڑوں روپے کی سرکاری اراضی واگزار کر لی ۔تفصیلات کے مطابق ڈائریکٹر اینٹی کرپشن کی ہدایت پر محکمہ کے افسران نے کروڑوں روٖٖپے کی 342 کنال اراضی واگزار کراتے ہوئے ملزمان چیف ایگٹو آفیسر کمالیہ شوگر ملز موجودہ مالک پیپسی کولا فاروق خان ‘ نائب تحصیلدار کمالیہ محمد اقبال اور سروسز سنٹر آفیشل ریکارڈ اراضی سنٹر کمالیہ شیراز گل کے خلاف جعل سازی / خزانہ سرکار کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچانے پر مقدمہ درج کر لیا ہے ۔ریجنل ڈائریکٹر اینٹی کرپشن محمد طارق قریشی کو ڈپٹی کمشنر / ڈسٹرکٹ کلکٹر ٹوبہ ٹیک سنگھ کی جانب سے لیٹر موصول ہوا کہ ملزمان نے باہم ساز باز کرکے کمالیہ شوگر ملز کی ملکیت بوگس دستاویزات پر تبدیل کروالی اور پھر مل پر قرضہ مبلغ دو ارب 65 کروڑ 9 لاکھ روپے حاصل کر لیا ۔ مل مالکان نے اسسٹنٹ کمشنر کمالیہ کی جانب سے تبدیلی ملز نام کے جعلی احکامات تیار کئے جس سے خزانہ سرکار کو سرکاری محصولات کی مد میں کروڑوں روپے کا نقصان پہنچا ۔ الزام علیہان نے جعل سازی کے ذریعے نہ صرف زمین کی ملکیت تبدیل کی بلکہ اربوں روپے کا قرضہ بھی حاصل کیا جس پر ریجنل ڈائریکٹر اینٹی کرپشن محمد طارق قریشی نے ڈپٹی ڈائریکٹر ( لیگل ) شہرام مظفر اور اسسٹنٹ ڈائریکٹر ( تفتیش ) کو معاملہ کی انکوائری کا حکم دیا جنہوں نے انکوائری کے دوران الزام علیہان کو جعل سازی اور خزانہ سرکار کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچانے کا مرتکب پایا ۔ دوران انکوائری نیشنل بینک آف پاکستان کے متعلقہ اہلکاران کو طلب کرکے کمالیہ شوگر ملز کے ریکارڈ کی چھان بین کی گئی جس پر فاروق خان ایگزیکٹو چیف آفیسر کمالیہ شوگر ملز نے بینک سے حاصل کیا ہوا قرضہ دو ارب 65 کروڑ 9 لاکھ روپے خزانہ سرکار میں واپس جمع کروا دیئے۔ مزید برآں جعلی انتقال کی لینڈ ریکارڈ میں درستگی کر دی گئی ہے اور 858 کنال زمین بھی پنجاب انڈسٹریل ڈویلپمنٹ بورڈ کے نام بحال کر دی گئی ہے ۔ یاد رہے کہ ایگزیکٹو چیف آفیسر ملزم فاروق خان نے سرکاری اراضی 342 کنال پر ناجائز قبضہ کیا ہوا تھا جو واگزار کرا لیا گیا ہے ۔ اسسٹنٹ ڈائریکٹر تفتیش ٹوبہ ٹیک سنگھ واجد بھروانہ نے محکمہ مال اور محکمہ پولیس کی مدد سے موقع پر پہنچ کر رقبہ ناجائز قابضین سے واگزار لیا جو کہ 1998 سے ناجائز طور پر قابض تھے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں